News ٰآس پاسٰ برصغیر تازہ ترین

ہندوستان: گجرات اور ہماچل پردیش میں بی جے پی کو برتری

ریاست گجرات کے اسمبلی انتخابات کے ابتدائی رجحانات میں پہلے تو حکمراں جماعت بی جے پی اور کانگریس میں کانٹے کا مقابلہ نظر آیا لیکن اب بی جے پی کو برتری حاصل ہے۔
انڈین الیکشن کمیشن کی سائٹ کے مطابق ابھی تک گجرات میں 87 سیٹوں کا فیصلہ ہو چکا ہے جس میں 45 بی جے پی کے حصے میں آئی ہے جبکہ 39 سیٹیں کانگریس کے حصے میں آئی ہیں اور تین سیٹیں دیگر پارٹی کے حصے میں۔
ہماچل پردیش سے 16 سیٹوں کے نتائج کا اعلان ہوا ہے جس میں نو بی جے پی، چھ کانگریس اور ایک کمیونسٹ پارٹی کے حصے میں آئی ہے۔
اسمبلی میں سادہ اکثریت کے لیے 92 سیٹیں چاہیے اور ابھی سے تھوڑی دیر قبل بی جے پی کو 100 سے زیادہ سیٹوں پر سبقت نظر آ رہی تھی۔
بہر حال نتائج ایگزٹ پول کی ترجمانی بھی نہیں کر رہے ہیں کیونکہ تقریبا تمام تر ایگزٹ پول نے بی جے پی کے لیے زبردست کامیابی کی پیش گوئی کی تھی۔
ابھی ووٹوں کی گنتی جاری ہے۔ گجرات کا اسمبلی انتخاب بی جے پی کے لیے انتہائی اہم ہے کیونکہ اگر اس میں اسے شکست ہوتی ہے تو سنہ 2019 کے عام انتخابات میں اسے مشکل پیش آ سکتی ہے۔
گجرات میں گذشتہ 22 سال سے بی جے پی برسر اقتدار ہے۔ وزیر اعظم نریندر اور پارٹی کے صدر امت شاہ کا تعلق اسی ریاست سے ہے اور انھوں نے گجرات کے ترقی کے ماڈل کے نام پر مرکز میں بھی اقتدار حاصل کیا تھا۔
تاہم حالیہ انتخابات میں بی جے پی کے خلاف بہت سے عوامل کارفرما تھے۔ ریاست میں ذات پات کی تقسیم، پٹیل برادری میں ریزرویشن نہ ملنے کے سبب ناراضگی اور دلت برادری کے چند نوجوان رہنما کی آمد بی جے پی کے لیے درد سر کہی جا رہی تھی۔
بعض نامہ نگاروں کا خیال ہے کہ انتخابات سے قبل ماحول کو اپنی طرف لانے کے لیے وزیر اعظم نریندر مودی نے کوئی کسر نہیں چھوڑی یہاں تک کہ انھوں نے گجرات میں ایک جلسے سے خطاب کرتے ہوئے الزام لگایا تھا کہ پاکستان گجرات میں جاری اسمبلی انتخابات کے نتائج پر اثر انداز ہونے کی کوشش کر رہا ہے اور اس کوشش میں کانگریس پارٹی اس کے ساتھ ہے۔
انتخابات سے قبل وہاں کے ماحول کو پولرائز کرنے کے لیے جعلی خبریں بھی گشت کرتی رہی جبکہ سوشل میڈیا پر طرح طرح کی چیزیں دیکھنے میں آئیں۔
گجرات سنہ 2002 کے فسادات کے بعد ہندو مسلم کشیدگی کے لیے مسلسل خبروں میں رہا ہے اور وہاں ایک طرح سے مذہبی خطوط پر تقسیم واضح طور پر نظر آئی ہے جس کا خاطر خواہ فائدہ حمکراں جماعت کو ہوتا رہا ہے۔

5,010 total views, 0 views today

One Reply to “ہندوستان: گجرات اور ہماچل پردیش میں بی جے پی کو برتری

Leave a Reply

Your email address will not be published.