News ٰآس پاسٰ تازہ ترین

’کشمیر کی طرح انسانیت کو بھی آزادی


انڈیا کے زیرِانتظام کشمیر کے کشیدہ ماحول میں پلنے بڑھنے والی لڑکیوں اور ملک کے باقی حصوں میں رہنے والی لڑکیوں کی زندگی کتنی یکساں اور کتنی مختلف ہو سکتی ہے؟
یہی سمجھنے کے لیے وادی کشمیر میں رہنے والی دعا اور دہلی میں مقیم سومیا نے ایک دوسرے کو خط لکھے۔ سومیا اور دعا کی ایک دوسرے سے کبھی ملاقات نہیں ہوئی ہے۔ انھوں نے ایک دوسرے کی زندگی کو گذشتہ ڈیڑھ ماہ کے دوران خطوط کے ذریعے ہی جانا۔ یہ اس سیریز کا آخری خط ہے۔
٭ کشمیریوں کی ان سنی کہانیاں: خصوصی ضمیمہ
پیاری دعا،
تمہارا خط ملا اور مجھے اچھا لگا کہ آپ نے مجھے کشمیر آنے کی دعوت دی لیکن میں دو سال تک کہیں نکلنے کے بارے میں نہیں سوچ رہی کیونکہ یہ دو سال میرے کریئر کے لیے بہت اہم ہیں۔
ہمارے خط شائع ہونے سے میرے خاندان اور جاننے والوں نے مجھے بھی بہت مبارکباد دی۔
میرے دوستوں نے بھی انھیں پڑھا اور انھیں یہ سلسلہ بہت اچھا لگا۔
جنت ارضی سے دہلی کی لڑکی کے نام خط
‘کیا واقعی کشمیر میں صرف مسلم رہتے ہیں؟’
‘مذہب کوئی ہو، کشمیر میں بھائی چارہ ہے’
ویسے میں آزادی کے بارے میں تم سے نہیں پوچھنا چاہتی تھی لیکن میں اپنی بےچینی دبا نہیں پائی۔
مجھے آپ کا جواب بہت اچھا لگا۔ کشمیری جن چیزوں سے آزادی چاہتے ہیں ان سے پوری انسانیت کو آزادی چاہیے۔

2,680 total views, 0 views today

4 Replies to “’کشمیر کی طرح انسانیت کو بھی آزادی

  1. This design is steller! You most certainly know how to keep a reader amused. Between your wit and your videos, I was almost moved to start my own blog (well, almost…HaHa!) Great job. I really loved what you had to say, and more than that, how you presented it. Too cool!|

  2. I like the helpful info you provide in your articles.
    I’ll bookmark your weblog and check again here frequently.
    I am quite sure I’ll learn a lot of new stuff right here!

    Good luck for the next!

  3. Hello! Someone in my Myspace group shared this website with us so I came to take a look.
    I’m definitely enjoying the information. I’m book-marking and will
    be tweeting this to my followers! Exceptional blog and amazing design.

  4. I blog quite often and I seriously appreciate your content.
    This great article has truly peaked my interest. I will book mark your blog and
    keep checking for new information about once a week.
    I subscribed to your RSS feed as well.

Leave a Reply to ig Cancel reply

Your email address will not be published.